ریلوے نے ‘جیون رکھشا مشن’ کے ذریعے 62 جانیں بچائیں، 1156 بچوں کو اسمگل ہونے سے بچایا

[ad_1]

ریلوے اپنے مسافروں کی حفاظت کو یقینی بنانے کے لیے ‘جیون رکھشا مشن’ اور ‘آپریشن ماتوشکی’ جیسی کئی اسکیمیں چلاتا ہے۔ ان تمام اسکیموں کا مقصد یہ ہے کہ ریلوے اسٹیشنوں اور ٹرینوں میں بچوں اور خواتین کی حفاظت کو یقینی بنائے۔

ریلوے پولیس فورس یعنی آر پی ایف نے فروری کے مہینے میں ‘جیون رکھشا مشن’ کے تحت کل 62 جانیں بچائی ہیں۔ اس کے علاوہ مجموعی طور پر 1156 بچوں کو بھی اسمگلنگ کے جال میں پھنسنے سے بچایا گیا ہے۔ ان میں 787 لڑکے اور 369 لڑکیاں شامل ہیں۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ ریلوے بچوں اور خواتین کی حفاظت کو بڑھانے کے لیے اس طرح کی مہم چلاتا رہتا ہے۔

‘آپریشن ماتری شکتی’ کے ذریعے خواتین کی مدد کرنا
اس کے علاوہ خواتین کی حفاظت کے لیے ‘آپریشن متروشکتی’ بھی شروع کیا گیا ہے، جس کے ذریعے 9 حاملہ خواتین مسافروں کو ریلوے پولیس فورس نے مدد فراہم کی ہے۔ اس کے علاوہ ریلوے نے عوام کے کھوئے ہوئے سامان کی واپسی کے لیے ‘آپریشن امانت’ بھی شروع کر دیا ہے۔ اس آپریشن کے تحت ریلوے کی طرف سے 2.93 کروڑ کا سامان اس کے مالک تک پہنچایا گیا ہے۔

کئی بار ہم نے دیکھا ہے کہ ٹرین میں چڑھتے اور اترتے وقت لوگوں کا سامان پھسل جاتا ہے۔ ایسے میں ریلوے پولیس کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ لوگوں کی مدد کرے اور ان کی جان کی حفاظت کرے۔ اسے ‘جیون رکھشا مشن’ کا نام دیا گیا ہے۔ اس مشن کے ذریعے ریلوے نے کل 35 مرد اور 27 خواتین کو بچایا ہے۔ اس کے ساتھ ہی ریلوے نے 2.28 کروڑ روپے کی نشہ آور اشیاء بھی برآمد کی ہیں۔

ریلوے نے بچوں کے لیے ‘آپریشن ننھے فرشتے’ شروع کر دیا۔
ریلوے بچوں کی حفاظت کے حوالے سے بہت محتاط ہے۔ اس کے لیے ریلوے نے ‘آپریشن ننھے فرشتے’ شروع کیا ہے۔ بعض اوقات بچے ٹرین میں چھوٹ جاتے ہیں یا چھوڑ دیئے جاتے ہیں۔ بعض اوقات بچوں کو اسمگلنگ کے لیے ٹرینوں سے بھی لے جایا جاتا ہے۔ ایسے میں ان بچوں کی مدد کے لیے ریلوے نے یہ آپریشن شروع کیا ہے۔ ریلوے نے کل 1156 بچوں کو ریلوے اسٹیشنوں اور ٹرینوں سے بچایا ہے۔ اس میں 787 لڑکے اور 369 لڑکیاں ہیں۔ ریلوے نے یہ کام این جی اوز کے ساتھ مل کر کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں-

نیٹ بینکنگ استعمال کرتے وقت ان باتوں کا خیال رکھیں، آپ دھوکہ دہی کا شکار نہیں ہوں گے!

مسافر متوجہ ہوں! ہولی ریلوے نے اس سے پہلے 251 ٹرینیں منسوخ کیں، 11 ٹرینوں کا شیڈول تبدیل کیا گیا۔

,

[ad_2]

Source link

Leave a Comment

Your email address will not be published.