امامی کے ہرش وردھن اگروال کہتے ہیں کہ کوئی بھی کمپنی اپنی ماضی کی کامیابیوں پر ترقی نہیں کر سکتی

[ad_1]

ہندوستان کے خیالات: جب ملک میں ایک تنگاوالا بڑی تعداد میں نکل رہے ہیں تو بہت ہی کم وقت میں وہ کاروباری دنیا میں ان بلندیوں کو چھو رہے ہیں جو ملک کے خاندانی کاروبار کو چلانے والے کاروباریوں کو کئی دہائیاں لگیں۔ میراث بمقابلہ اسٹارٹ اپ: ماضی پر تعمیر کریں یا مستقبل کو دوبارہ بنائیں؟ اس موضوع پر بات کرنے کے لیے، آن سیکیوریٹی کے کولن شاہ، ہرش وردھن اگروال، امامی کے وائس چیئرمین اور منیجنگ ڈائریکٹر (نامزد) کے ساتھ، ABP آئیڈیاز آف انڈیا کے فورم، OnSecurity پہنچے۔ دونوں نے اس موضوع پر اپنے خیالات کا اظہار کیا کہ ملک کی صنعتوں کے ذریعے مستقبل کا راستہ کیسے آسان ہو گا۔

امامی کے ہرش وردھن اگروال نے کہا کہ امامی خوردنی تیل سے لے کر ایف ایم سی جی تک ریئل اسٹیٹ کے کاروبار میں موجود ہے، جس میں زندو، نوراتن، بوروپلس، کیشکنگ جیسے معروف برانڈز ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری جیسی کمپنی برسوں سے ملک میں کاروبار کر رہی ہے اور مصنوعات اور روزگار کے ذریعے ملک کے لوگوں کو اپنا حصہ ڈال رہی ہے۔ ملک ترقی کرے گا تو ہم ترقی کریں گے اور امامی اس سمت میں مسلسل کام کر رہے ہیں۔

ہرش وردھن اگروال نے کہا کہ کوئی بھی کمپنی صرف اپنی ماضی کی کامیابیوں پر نہیں چل سکتی۔ مستقبل کی طرف دیکھنا اور اس سمت میں آگے بڑھنا ضروری ہے۔ ہم یہ سوچ کر زندہ نہیں رہ سکتے کہ ہم کامیاب ہیں۔ ہم بہتر پوزیشن میں ہیں لیکن ہمیں ہمیشہ تبدیلی کے لیے تیار رہنا چاہیے۔ امامی کے ہرش وردھن اگروال کا کہنا ہے کہ ناکامی سے بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے اور امامی نے سخت چیلنجوں کے باوجود ناکامی کی کوئی گنجائش نہیں چھوڑی۔ ہم مسلسل اپنے صارفین کے اعتماد پر پورا اترنا سیکھنے کی کوشش کرتے ہیں اور اس کے نتیجے میں ہماری نئی تعلیم ہوتی ہے۔

آغاز چیلنج
OnSecurity کے کولن شاہ کا کہنا ہے کہ ایک سٹارٹ اپ کے طور پر ہم نے بڑے چیلنجز کا سامنا کیا اور مسلسل عزم کے ساتھ کمپنی نے اپنی جگہ بنائی۔ کمپنی نے اپنے کاروبار کو مزید تیزی سے بڑھانے کے لیے مسلسل کوششیں کی ہیں۔ OnSecurity کے کولن شاہ کا کہنا ہے کہ ہمارے پاس کھونے کے لیے کچھ نہیں ہے اور ہم اپنے صارفین کے اعتماد پر پورا اترنے کے لیے کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔ ہم اپنے صارفین کو بروقت خدمات فراہم کرنے کے لیے پرعزم ہیں اور اس سمت میں مسلسل بہتری کی طرف بڑھ رہے ہیں۔

کولن شاہ کا کہنا ہے کہ ملک میں اسٹارٹ اپس کے سامنے بہت سے چیلنجز کا سامنا رہا ہے اور اپنے کاروبار کو پھیلانے کے بھی بڑے مواقع سامنے آئے ہیں۔ OnSecurity نے اس مقام سے فائدہ اٹھانے کے لیے اپنے کسٹمر بیس کو نمایاں طور پر مضبوط کیا ہے اور کاروبار کے لحاظ سے زبردست ترقی حاصل کی ہے۔

کرونا کا چیلنج
امامی کے ہرش وردھن اگروال کا کہنا ہے کہ کورونا وبا کے دوران لاک ڈاؤن کے دوران کمپنی کے ساتھ ساتھ دوسروں کے سامنے بھی چیلنجز تھے لیکن کمپنی نے اسے اچھی طرح نبھایا۔ اگرچہ کمپنی کے ساتھ اپنے ملازمین کے ساتھ کاروبار چلانے کے لیے سرمائے کی بھی ضرورت ہوتی ہے لیکن لاک ڈاؤن کے دوران بھی امامی نے اپنے صارفین کا پورا خیال رکھا۔ OnSecurity کے کولن شاہ کا کہنا ہے کہ ایسے حالات میں بہت سے دانشمندانہ فیصلے کرنے پڑتے ہیں اور خاص طور پر سٹارٹ اپس کے لیے لاک ڈاؤن کا وقت بہت مشکل تھا لیکن تمام اسٹارٹ اپس نے اسے اچھی طرح سنبھالنے کی کوشش کی۔

خاندانی کاروبار اور آغاز
امامی کے ہرش وردھن اگروال کا کہنا ہے کہ جہاں ملک میں نئی ​​صنعتوں کے لیے بہت زیادہ ترقی کے مواقع موجود ہیں، وہیں منجمد کاروبار بھی اپنی نئی حکمت عملیوں کی وجہ سے نئے کاروبار کی ترقی کی جانب گامزن ہیں۔ ملک کی ترقی کے لیے پائیدار ترقی کی ضرورت ہے اور اس کے لیے پرانے کاروبار کے ساتھ نئے اسٹارٹ اپ کو بھی آگے آنا ہوگا۔ OnSecurity کے کولن شاہ کا کہنا ہے کہ سٹارٹ اپس میں لوگ نئے آئیڈیاز لے کر آتے ہیں اور بہت سے آئیڈیاز اتنے اچھے ہوتے ہیں کہ وہ اچھی مینجمنٹ کے ساتھ اسے بڑا بناتے ہیں۔ ہمیں جہاں صارفین کا اعتماد برقرار رکھنا ہے، وہیں ہمیں نئے سرمایہ کاروں کا بھی خیال رکھنا ہے۔ ملک میں اسٹارٹ اپس کے پاس اپنے کاروبار کو بڑھانے کے لیے چیلنجز کے ساتھ ساتھ مواقع بھی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:

بھارتی ایئرٹیل: ایئرٹیل نے 8815 کروڑ روپے ادا کیے، وقت سے پہلے حکومت کو سپیکٹرم نیلامی کے واجبات ادا کر دیے

ایس بی آئی کے کروڑوں صارفین کے لیے خوشخبری! اس نمبر کو فوری طور پر فون میں محفوظ کر لیں، تمام کام صرف ایک کال پر ہو جائیں گے۔

,

[ad_2]

Source link

Leave a Comment

Your email address will not be published.